68

سعودی عرب میں کرونا وائرس کا کرفیو اور لاک ڈاؤن ختم کردیا گیا جس کے بعد مملکت کے تمام سرکاری دفاتر بھی کھل گئے اور معمول کے مطابق کام شروع ہوگیا

Share On:

سعودی عرب: تمام سرکاری دفاتر کھل گئے شہریار بھروآنہ 📡🌍📡🌍📡🌍📡🌍📡🌍📡 ریاض: سعودی عرب میں کرونا وائرس کا کرفیو اور لاک ڈاؤن ختم کردیا گیا جس کے بعد مملکت کے تمام سرکاری دفاتر بھی کھل گئے اور معمول کے مطابق کام شروع ہوگیا۔ سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود کے ذرائع کا کہنا ہے کہ مملکت میں کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے نافذ کیے جانے والا کرفیو اتوار 21 جون سے ختم ہونے پر سعودی عرب کے تمام سرکاری اداروں میں کام حسب معمول شروع کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مملکت کے تمام شہروں میں سرکاری دفاتر میں 75 فیصد عملہ ڈیوٹی ادا کرے گا. ذرائع کا کہنا ہے کہ کرفیو اٹھائے جانے کے بعد سرکاری اداروں میں ڈیوٹی ادا کرنے والوں کے لیے چار نکات مقرر کیے ہیں۔ ڈیوٹی کے دوران کارکنوں کو کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے مقررہ ایس او پیز کا ہرطرح سے خیال رکھنا لازمی ہوگا۔ ڈیوٹی پر آنے والے کارکنوں کو 3 شفٹوں میں تقسیم کیا جائے گا، پہلے گروپ کی شفٹ کا آغاز ساڑھے 7 پر ہوگا۔ دوسری شفٹ ساڑھے 8 پر پہنچے گی جبکہ تیسری شفٹ ساڑھے 9 بجے کام کا آغاز کرے گی۔ تیسرے نکتے میں کہا گیا ہے کہ وہ کارکن خواہ مرد ہوں یا خواتین جن کا دفتر آنا انتہائی ضروری نہ ہو وہ ورک فرام ہوم کے اصول کے تحت ہی اپنی ذمہ داریاں ادا کریں گے۔ اسی طرح ایسے کارکن جنہیں وائرس لگنے کا زیادہ خطرہ ہو وہ بھی گھروں سے ہی ڈیوٹی ادا کریں گے جس طرح کرفیو اور لاک ڈاون کے دوران کیا کرتے تھے۔ وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود نے اس بات پرزور دیا ہے کہ سرکاری و نجی اداروں کے ملازمین مقررہ پروٹوکول کی ہر طرح سے پابندی کریں گے اور کرونا سے بچاؤ کے لیے مقررہ کردہ ضوابط کی خلاف ورزی کے مرتکب نہیں ہوں گے۔ خلاف ورزی کرنے والے افراد کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں