117

امریکہ پر ایرانی میزائل حملے

Share On:

اللہ کے عظیم بابرکت نام سے ایران و دنیا بھر کے شیعوں کے روحانی رہنما و پیشوا آیت اللہ خامنائی نے آپریشن ” قاسم سلیمانی ” کا آغاز کردیا جس کے نتیجے میں عراق میں موجود امریکی فوجی اڈوں النبار صوبے میں واقع عین الاسد فوجی بیس جہاں 4 ہزار امریکی فوجی تعینات تھے اور کرد اکثریتی علاقے اربیل میں موجود امریکی بیس پر ایران سے 35 زمین سے زمین پر مار کرنے والی ذوالفقار بلاسٹک میزائیل داغے گئے جس کی تصدیق پینٹاگون و وائٹ ہاوس نے کردی ۔ 80 سے زائد امریکی فوجیوں کے مرنے کی اطلاعات ہیں ۔ ایرانی پاسداران انقلاب نے عراق میں موجود امریکی فوجیوں کو اقوام متحدہ کے چارٹر آرٹیکل 51 کے تحت نشانہ بنایا اس حملے کا نشانہ صرف قابض فوجی تھے جنہیں عراقی عوام نے واضح تور پر ملک بدر ہوجانے کو کہا تھا ۔ ایران نے واضح کیا ہے اگر کسی عرب ملک میں واقع امریکی فوجی اڈوں سے ایران کو نشانہ بنایا گیا تو ان ممالک کو زمین کے برابر لیول کردیا جائے گا ۔ جبکہ امریکی صدر ٹرمپ قومی سلامتی مشیروں کے ہمراہ حملے کے نتیجے میں ہونے والی نقصانات کا جائزہ لے رہے ہیں ۔۔۔

-: مزمل حاتمی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں